غریب کسان اور اس کی خوبصورت بیوی ایک غریب کسان کی شادی ایک حسین و جمیل لڑکی سے ہو گی مزید جانیں

ایک غریب کسان کی جوان بیوی اور پھر رات کو ایک غریب کسان کی شادی ایک بہت ہی خوبصورت عورت سے ہو گئی۔ اس عورت کی خوبصورتی کی سب سے بڑی وجہ اس کے لمبے گھنے کالے بال تھے جو نہ صرف اسے بلکہ دونوں کو پریشان کر رہے تھے۔ ایک دن کسان کی بیوی نے اپنے شوہر سے کہا کہ کل واپسی پر راستے میں دکان سے ایک کنگھی لے جانا، کیونکہ بالوں کو لمبا اور گھنا رکھنے کے لیے ان کو سنوارنا بہت ضروری ہے۔

اور پھر میں کتنے دن پڑوسیوں سے کنگھی مانگتا رہوں گا؟” غریب کسان نے اپنی بیوی سے معافی مانگی اور کہا، “میرے عزیز، میری گھڑی کا پٹا کئی دنوں سے ٹوٹا ہوا ہے۔ میرے پاس اتنے پیسے نہیں ہیں کہ اسے ٹھیک کر سکوں، تو میں کنگھی کیسے لاؤں؟” تم کچھ دن اور پڑوسیوں کو کنگھی کرنے میں لگا دو، جب میرے پاس پیسے ہوں گے تو میں لے آؤں گا!” بیوی اپنے شوہر کی مجبوری کو سمجھتی تھی اس لیے اسے زیادہ نہیں دہرایا۔ کسان نے اس وقت اپنی بیوی کو خاموش کرایا لیکن پھر اندر ہی اندر اپنے آپ کو کوسنے لگا کہ میں بھی کتنا دکھی ہوں۔

کہ وہ اپنی بیگم کی ایک چھوٹی سی خواہش بھی پوری نہیں کر سکتا۔ اگلے دن کھیتوں سے واپسی پر کسان ایک گھڑی کی دکان پر گیا اور اپنی ٹوٹی ہوئی گھڑی پیسے کے عوض بیچ دی اور اس رقم سے ایک اچھی کنگھی خرید کر چپکے سے گھر کی طرف روانہ ہو گیا۔

اس نے سوچا کہ گھر جا کر بیوی کو سرپرائز دے تو وہ بہت خوش ہو جائے گی۔ جب وہ گھر گیا تو دیکھا کہ اس کی بیوی نے اپنے لمبے بال کاٹے ہیں۔ اور وہ مسکراتے ہوئے اسے دیکھ رہی تھی۔ کسان نے حیرت سے پوچھا: بیگم! آپ نے اپنے بال کیوں کاٹے، کیا آپ جانتے ہیں کہ یہ آپ کو کتنے خوبصورت لگ رہے تھے؟ بیگم نے کہا، “میرے پیارے سرتاج! کل جب تم نے کہا کہ تمہارے پاس گھڑی ٹھیک کرنے کے پیسے بھی نہیں ہیں تو میں بہت افسردہ ہو گئی۔” تو آج میں قریبی بیوٹی پارلر گیا، وہاں اپنے بال بیچے اور آپ کے لیے یہ گھڑی لائی!

” جب کسان نے اُسے کنگھی دکھائی تو فرطِ جذبات میں دونوں کی آنکھیں نم ہو گئیں.محبت صرف کچھ دینے اور لینے کو ہی نہیں کہتے، بلکہ محبت ایک قربانی اور ایثار کا نام ہے جس میں اکثر اپنی خواہشات اور جذبات کو صرف اِس لیے قربان کر دیا جاتا ہے تاکہ رشتوں کا تقدس اور احترام برقرار رہے

کسان نے جب اسے کنگھی دکھائی تو جذبات سے دونوں کی آنکھیں نم ہو گئیں۔محبت صرف دینے اور لینے کا نام نہیں ہے بلکہ محبت ایک قربانی اور ایثار کا نام ہے جس میں اکثر اپنی خواہشات اور خواہشات کو قربان کر دیا جاتا ہے۔ صرف اس کے لیے احساس ہوتا ہے۔یہ اس لیے کیا جاتا ہے کہ رشتے کا تقدس اور احترام برقرار رہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.